کوئٹہ سریاب پولیس ٹریننگ سنٹر میں دہشت گردی اصل میں پاکستان کے مستقبل پر حملہ ہے،سید ابرار حسین

جہلم(سید افتخار کاظمی)کوئٹہ سریاب پولیس ٹریننگ سنٹر میں دہشت گردی اصل میں پاکستان کے مستقبل پر حملہ ہے،دہشت گرد پیچھے سے وار کرنے کی بجائے سامنے سے کریں تو ہماری پاک فوج اور پولیس اس کی اینٹ سے اینٹ بجا دیں گئی لیکن وہ گیڈر کی طرح پیچھے سے چھپ کر وار کرنے کی عادی ہے ان میں ہمت نہیں ہے کہ سامنے آکر مقابلہ کریں، ہماری پاک آرمی شیر وں کی طرح ان سے لڑتے ہیں اور ان کا مکمل صفایا کر کے واپس لوٹتے ہیں اوروہاں پر قومی پرچم لہرا کر آتے ہیں،ان خیالات کااظہار پرنسپل جامعہ ہاشمیہ سید ابرار حسین نقوی نے کیاانہوں نے کہا کہ جب تک پاکستان سے مکمل دہشت گردی ختم نہیں ہو جاتی اس وقت تک پاکستان صحیح معنوں میں ترقی کی طرف گامزن نہیں ہو سکتا۔کیونکہ جن نوجوان نسلوں نے پاکستان اور پاکستان کے مستقبل کو سنبھالنا ہے دہشت گرد انہی کو دہشت گردی کا نشانہ بنا رہے ہیں۔دہشت گرد پاکستان کو کمزور سے کمزور کرنا چاہتے ہیں لیکن اگر ہم سب ملکر اور ایک سمت چل کر پاکستان کی سلامتی اس کی بقاء اس کے مستقبل کو محفوظ بنانا چاہتے ہیں تو ہمیں اس کیلئے موثر اقدام اٹھانے ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ دہشت گردی میں شہید ہونے والے تمام ماؤں کے بچوں کو سلام پیش کرتا ہوں کہ جنہوں نے ابتداء میں ہی اپنا مستقبل اپنے ملک اور قوم کیلئے قربان کر دیا اور دہشت گردی میں جتنے ماؤں کے لال زخمی ہوئے ہیں ہماری دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ انہیں جلد صحت یابی عطا فرمائے تاکہ وہ صحت مند ہو کر اپنے ملک اور عوام کی حفاظت کرتے ہوئے اپنے فرائض اسی طرح سرانجام دیتے رہیں۔