ای ڈی او ہیلتھ کی سفاکیت اور انتقامی کاروائیاں عروج پر

جہلم(عبدالغفور بٹ)ای ڈی او ہیلتھ کی سفاکیت اور انتقامی کاروائیاں عروج پر،محمد عاطف ولد محمد حنیف بنیادی مرکز صحت چک لطیف اللہ پر ڈسپنسر کے فرائض سرانجام دے رہے ہیں اور سی ایس ایس کے امتحان میں شامل ہونے کیلئے این او سی کی درخواست ای ڈی او ہیلتھ کو دی جب کوئی جواب نہ آیا تو خود ای ڈی او آفس چلے گئے اور ای ڈی او کے لیپالک ایڈمن آفیسر جاوید بٹ سے این او سی کیلئے پوچھا تو جاوید بٹ نے جواب دیا کہ ای ڈی او ہیلتھ جہلم نے آپ کی درخواست مسترد کر دی ہے،جب عاطف نے اصرار کیا کہ مجھے مسترد شدہ درخواست دیں تاکہ میرے پاس کوئی ثبوت ہو تو جاوید بٹ نے کہا کہ ای ڈی او ہیلتھ جہلم نے منع کیا ہوا ہے کہ کسی کو کوئی لیٹر نہیں دینا ورنہ یہ عدالت میں چلے جائیں گے اور ای ڈی او ہیلتھ نے مجھے یہ بھی کہا ہے کہ بنیادی مراکز صحت کے ملازمین کا کوئی کام نہیں کرنا اور جب بھی آئیں انہیں آفس سے نکال دو ،لہذا آپ جا کر ای ڈی او ہیلتھ سے خود مل لیں۔محمد عاطف نے میڈیا اور اخبار نویسوں سے بات کرتے ہوئے یہ بتایا کہ میں جب ای ڈی او ہیلتھ جہلم کے آفس چلا گیا اور انہیں کہا کہ سر میں نے این او سی کی درخواست دی تھی اور جاوید بٹ نے آپ کے حکم کے مطابق جواب دیا ہے تو ای ڈی او ہیلتھ جہلم نے کہا کہ ہاں میں نے مسترد کر دی ہے اور وہ تمہیں نہیں مل سکتی ہاں البتہ اگر تم تجربے کا سرٹیفکیٹ چاہتے ہوتو اس کیلئے درخواست دو تو وہ ہم دے دیں گے۔یاد رہے کہ کسی بھی امتحان یا نوکری کی درخواست کیلئے ملازمت پیشہ افراد کو این او سی پیش کرنا پڑتا ہے نہ کہ تجربے کا سرٹیفکیٹ ۔