حکومت نے مظلوم اور دہشتگرد کو ایک ہی صف میں کھڑا کر دیا ہے،مولانا علی سلیمان کاظمی

کھیوڑہ( راجہ فیاض الحسن) حکومت نے مظلوم اور دہشتگرد کو ایک ہی صف میں کھڑا کر دیا ہے۔حکومت علامہ محسن علی نجفی کا نام فورتھ شیڈول سے خارج کرے۔تفصیلات کے مطابق شیعہ علمأ کونسل کے مقامی صدر مولانا علی سلیمان کاظمی کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے حال ہی میں بیلنس پالیسی کے تحت ظالم اور مظلوم،دہشت گرد اور امن پسند،تنگ نظر اور روشن خیال لوگوں کو ایک ہی قطار میں کھڑا کر دیا گیا ہے۔جو کہ سرا سر نا انصافی اور ظلم ہے۔ان کا کہنا تھا کہ حکومتی اداروں کی طرف سے دہشت گردوں کی سرکوبی کے لئے جاری شدہ شیڈول فورتھ میں سب سے بڑا ظلم یہ کیا گیا ہے کہ مفسرِ قرآن، بانی ہادی ٹی وی،الکوثر اسلامک یونیورسٹی اسلام آباد کے مؤسس ، محسنِ ملت علامہ شیخ محسن علی نجفی کا نام بھی شامل ہے۔جو کہ شیعہ سنی تمام حلقوں میں اتحاد کے داعی کے طور پر جانے جاتے ہیں۔اور ہر مکتب کی نظر میں انھیں احترام کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔علی سلیمان کاظمی کا دعویٰ تھا کہ علامہ موصوف ایک فلاحی شخصیت ہیں۔درجنوں دینی و تنظیمی اداروں ، مدارس، سکولز اور کالجز کی بنیاد رکھنا۔ اور بغیر کسی مسلکی امتیازسیلاب زدہ علاقوں میں2000 سے زیادہ گھر تعمیر کرنا،ہزاروںیتیموں کی کفالت کرنا،اجتماعی شادیاں کروانااور خیراتی اداروں کی تشکیل ان کے ہاتھوں ہی ہوئی ہے۔کسی دہشت گردی کی کاروائی میں ملوث ہوناتو دور کی بات کسی مسلک کا کوئی شخص ان کی کوئی ایسی بات سامنے نہیں لا سکتاجو قابلِ گرفت یا اتحاد بین المسلمین کے خلاف ہو۔اس صورتِ حال میں ان کی شہریت منسوخ کرنا،اثاثے منجمد کرنا،شناختی کارڈ اور پاسپورٹ کینسل کردینا اور شیڈول فورتھ میں شامل کر نا۔ ان اقدامات کو کس نگاہ سے دیکھا جائے؟مولانا نے مزید کہا کہ ہماری پوری قوم اور میں مذہبی راہنمااور شیعہ علمأ کونسل کے مقامی صدرکی حیثیت سے اپنی قوم کی نمائندگی کرتے ہوئے اس کی پر زور مذمت کرتا ہوں ان کا دعویٰ تھا کہ ساری قوم اس پر سراپا احتجاج ہے۔اور مطالبہ کرتی ہے کہ حکومت ہوش کے ناخن لے۔مزید یہ کہ ظالم اورمظلوم میں فرق رکھے۔اور جلد از جلد علامہ شیخ محسن علی نجفی کا نام فورتھ شیڈول کی فہرست سے خارج کر دے۔ورنہ بعد کی صورتحال کی ساری ذمہ داری حکومت پر ہو گی۔