نااہل انتظامیہ نے سول ہسپتال جہلم کا بیڑہ غرق کر دیا،

جہلم (محمدامجد بٹ) نااہل انتظامیہ نے سول ہسپتال کا بیڑہ غرق کر دیا، ایمرجنسی میں بلڈپریشر چیک کرنے والی مشین بھی دستیاب نہیں، سینکڑوں مریضوں کو جانیں داو پر لگ گئیں ، ڈاکٹر ادویات لکھ کر نہیں دے رہے ، مریضوں کا شکوہ، بلڈ پریشر چیک کئے بغیر ادویات نہیں دے سکتے، ڈاکٹرز ، بلڈ پریشر مشین ٹوٹ گئی ہے نئی ملنے تک ہم کچھ نہیں کر سکتے ، سٹاف کا موقف، ایم ایس خالد چوٹالہ لمبی تان کر سو گیا ، اعلی حکام فوری نوٹس لیں ، شہریو ں کی دہائی، تفصیلات کے مطابق جہلم شہر کے سب سے بڑے سول ہسپتال کی کروڑوں روپے کی لاگت سے بننے والی ایمرجنسی کی حالت غیر ہو گئی ہے اور نااہل اور غیر ذمہ دار انتظامیہ کی غفلت کے باعث حالات اس قدر دگرگوں ہو گئے ہیں کہ ہسپتال کی ایمرجنسی میں چند سو روپے مالیت کی بلڈ پریشر چیک کرنے والی مشین بھی دستیاب نہیں ، جبکہ ہسپتال کا کروڑوں کا بجٹ ہر سال کہاں جاتا ہے کوئی نہیں جانتا، گزشتہ شب ایمرجنسی میں لائے جانے والے تقریبا تین درجن سے زائد افراد صرف بلڈپریشر مشین نہ ہونے کے باعث کئی گھنٹے تڑپنے کے بعد دیگر ہسپتالوں کا رخ کرنے پر مجبور کر دئیے گئے ، ہسپتال آنے والے مریضوں چوہدری سلیمان، محمد ناصر ، ساجد بٹ ، محمد احمد بٹ اور دیگر نے بتایا کہ کئی کئی گھنٹے سے یہاں پڑے تڑپ رہے ہیں لیکن کوئی پرسان حال نہیں، ڈاکٹر چیک کرنے کے بعد ادویات لکھ نہیں دیتا ، جبکہ ایمرجنسی میں موجود ڈاکٹر کا کہنا تھا کہ مریضوں کا بلڈپریشر چیک کروانے کے بعد ہی ادویات دی جاسکتی ہے اور یہ کام سٹاف کا ہے ، اس سلسلہ میں جب سٹاف سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بتایا کہ بلڈ پریشر مشین ٹوٹ گئی ہے اور فی الحال متبادل کوئی مشین دستیاب نہیں ہم نے ایم ایس آفس کو مطلع کیا ہے جب مشین ملے گی تو چیک اپ کر دیا جائے گا ۔ مریضوں کی سیریس حالت کے پیش نظر کئی افرادایم ایس خالد چوٹالہ اور انتظامیہ کو کوستے ہوئے اپنے مریضوں کو نجی ہسپتالوں میں لے گئے ۔ موقف جاننے کیلئے جب ایم ایس آفس رابطہ کیاگیا تو انتظامی افسران میں سے کوئی بھی موجود نہ تھا اور موقع پر موجود چوکیدار نے بتایا کہ سب افسران گھروں کو چلے گئے ہیں اب اتوار کی چھٹی کے بعد آئیں گے تو ان کو صورتحال سے مطلع کیا جائے گا ، دوسری جانب مریضوں کے اہلخانہ کا کہنا ہے کہ ایم ایس ، ڈی ایم ایس چھٹیاں منا رہے ہیں یہاں لوگ چند سو روپے کی مشین نہ ہونے سے مر رہے ہیں ضلعی انتظامیہ اور محکمہ صحت کیا کر رہا ہے ، ایم ایس ہسپتال کو بہتر کرنے کے جھوٹے دعوے کرتا رہتا ہے اصل صورتحال انتہائی تشویش ناک ہے ، وزیر اعلی پنجاب جہلم کے لوگوں کو ن لیگ کو ووٹ دینے کی سزا نہ دیں اور سول ہسپتال میں سہولیات فراہم کرنے کے ساتھ کسی ذمہ دار اور اہل شخص کو ایم ایس تعینات کریں ۔