امریکا کا 15ویں بار میزائل دفاعی نظام کا کامیاب تجربہ

واشنگٹن: شمالی کوریا کی جانب سے بین البراعظمی بیلسٹک میزائل کے تجربے کے بعد امریکا نے ایک بار پھر میزائل دفاعی نظام ’’تھاڈ‘‘ کا کامیاب تجربہ کرلیا۔
غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق گزشتہ روز شمالی کوریا نے دعویٰ کیا تھا کہ اس نے بین البراعظمی میزائل کا دوسرا تجربہ کیا ہے جو امریکا تک مار کرنے کی صلاحیت بھی رکھتا ہے۔ اس کے بعد امریکا نے ایک بار پھر ’’تھاڈ‘‘ میزائل دفاعی نظام کا کامیاب تجربہ کیا جسے جلد ہی جنوبی کوریا میں نصب کردیا
امریکی میزائل ڈیفنس ایجنسی کی جانب سے جاری بیان کے مطابق بحرالکاہل کے اوپر پرواز کرنے والے امریکی ایئرفورس کے سی 17 طیارے نے درمیانے فاصلے تک مار کرنے والے میزائل کو داغا جس کا امریکی ریاست الاسکا میں نصب تھاڈ یونٹ نے کامیابی سے سراغ لگایا اور اسے ہدف تک پہنچنے سے قبل ہی تباہ کردیا۔
واضح رہے کہ تھاڈ (ٹرمینل ہائی ایلٹی ٹیوڈ ایریا ڈیفنس) کا مخفف ہے اور اب تک امریکا 15 بار اس کا تجربہ کرچکا ہے جو ہر بار کامیاب رہا ہے۔ امریکا نے اس دفاعی نظام کو جلد از جلد جنوبی کوریا میں نصب کرنے کا منصوبہ بنا رکھا ہے تاکہ شمالی کوریا کی جانب سے داغے گئے کسی بھی میزائل کو بروقت تباہ کیا جا سکے۔
جنوبی کوریا کی سابق وزیراعظم پارک گوین ہوئے نے امریکا کے ساتھ اس دفاعی نظام کی تنصیب کا معاہدہ کیا تھا تاہم نئے وزیراعظم مون جائے ان نے اس کی تنصیب کے عمل کو روک دیا ہے اور ان کا کہنا ہے تنصیب سے قبل اس کے ماحولیات پر پڑنے والے اثرات کا دوبارہ جائزہ لینا ضروری ہے۔