سول ہسپتال جہلم میں کروڑوں کے فنڈز کے باوجود مشینری خریدنے سے اجتناب

جہلم (محمدا مجد بٹ ) سول ہسپتال میں کروڑوں کے فنڈز کے باوجود مشینری خریدنے سے اجتناب ، شہری اہم ٹیسٹ بھاری فیسیں دے کر کروانے پر مجبور، وزیر اعلی پنجاب سول ہسپتال میں اہم مشینری نہ خریدنے کے ذمہ داروں کے خلاف ایکشن لیں، ایم ایس دفتر میں موجود نہیں ، رابطہ پر عملہ کا جواب، تفصیلات کے مطابق سول ہسپتال جہلم جہاں روزانہ ہزاروں مریض مختلف بیماریوں کے علاج کیلئے آتے ہیں لیکن وہاں پر اہم ترین ٹیسٹوں کیلئے مشینری نہ ہونے سے غریب مریض ہزاروں روپے دے کر ٹیسٹ باہر نجی لیبارٹریوں سے کروانے پر مجبور ہیں اس حوالے سے محکمہ صحت جہلم کے انتہائی باوثوق ذرائع کے مطابق ہسپتال کے پاس اس وقت بھی ڈیڑھ کروڑ کے فنڈز موجود ہیں اور اگلے چند روز تک مزید کروڑوں کے فنڈز فراہم کئے جائیں گے لیکن ہسپتال انتظامیہ خاموشی کی چادر تانے ہوئے ہے ا س وقت ہسپتال میں امیج انٹینسی فائر ، انڈو سکوپی کی مشینیں دستیاب نہ ہونے سے یہی ٹیسٹ باہر نجی لیبارٹریز سے سات سے بارہ ہزار میں کئے جارہے ہیں جس سے لیبارٹری مافیا کروڑوں روپے غریبوں کی مجبوری سے کما رہے ہیں اگر ہسپتال کے اندر ان مشینوں کے دستیابی ممکن ہو جائے تو مریضوں کو سہولت فراہم کی جاسکتی ہے ، اس سلسلہ میں موقف جاننے کیلئے ایم ایس سول ہسپتال کے دفتر رابطہ پر عملہ نے بتایا کہ ایم ایس دفترمیں فی الحال موجود نہیں ہیں ، شہریوں نے وزیر اعلی پنجاب سے اپیل کی ہے کہ فنڈز کے باوجود مشینری نہ خریدنے کی وجہ جاننے کیلئے تحقیقات کروائی جائیں ، کیونکہ ممکنہ طور پر لیبارٹر مافیا کو فائدہ پہنچانے کیلئے ہسپتال میں سہولت فراہم نہیں کی جارہی، اورذمہ داران کے خلاف فوری اور سخت ایکشن لیاجائے ۔