الخدمت رازی ہسپتال اسلام آباد کا افتتاح،،،،میر افسر امان،کالمسٹ

مشرقی اُفق

جماعت اسلامی کا یہ اعزاز رہا ہے کہ سیاست کے ساتھ ساتھ عوام کی خدمت کا بھی پروگرام لے کر چل رہی ہے۔ جب بھی اخبار کھول کر دیکھو کہیں نہ کہیں جماعت اسلامی کی الخدمت فاؤڈیشن عوام کی خدمت کرتی نظر آئے گی۔ اس سرگرمیاں میں دوسری سیاسی پارٹیوں میں کم نظر آتی ہیں۔جماعت اسلامی کی این جی او الخدمت فاؤڈیشن کے تحت ملک میں اور بیرون ملک خدمات کا ریکارڈ ہے۔ ابھی حال میں ہی الخدمات فاؤڈیشن کے چیف عبدلشکور صاحب اپنی ٹیم کے روہنگیا کے مظلوم مسلمانوں کی مدد کے بنگلہ دیش اور برما کی سرحد پر واقع مہاجرین کے کیمپ میں پہنچے تھے۔ ترکی، انڈونیشیا اور ملیشیا کی این جی اوز کے ساتھ مل کر مہا جرین کی آباد کاری کا کام کیا۔ملک میں جب بھی قدرتی آفات آئیں تو الخدمت فاؤ ڈیشن نے سب سے پہلے پہنچ کر اپنے دکھیا بھائیوں کی مدد کی۔ الخدمت مستقل طور پر صحت اورتعلیم پر ملک میں ایک عرصے سے کام کر رہی ہے۔ابھی دو دن پہلے سینیٹر امیر جماعت اسلامی جناب سراج ا لحق نے ۲۵ ؍اکتوبر ۲۰۱۷ء کو اسلام آباد کے زون ۵، ایف بی آر سوسائٹی میں ابتدائی طور پر ساٹھ بیڈز کے الخدمت رازی ہسپتال کا افتتاح کیا۔ یہ چھ منزلہ ہسپتال سی بی آر سوسائٹی کے تعاون سے قلیل وقت میں تیار کی گئی ہے۔ ابتدائی طور پر ادر گرد کی تقریباً ۱۵؍ دیگر سوسائٹیوں،جن کی آبادی ساڑھے تین لاکھ نفوس پر مشتمل ہے کو علاج کی سہولت فراہم کی جائے گی۔ اس آبادیوں کے لیے حکومت پاکستان کی طرف سے کوئی بڑی ہسپتال موجود نہیں ہے۔ اس کمی کو الخدمت نے پورا کیا ہے۔ ہم دیکھتے ہیں کہ کبھی کوئی عورت ایمبولینس کی بن گاڑی میں،کہیں سڑک پر، کہیں ہسپتال کی سیڑیوں پر اور کہیں بیڈ نے ملنے کی وجہ سے ہسپتال کے فرش پر بچوں کو جنم دے رہیں ہیں۔ اس مشکل کو سامنے رکھتے ہوئے الخدمت رازی ہسپتال کے قیام کے پس منظر میں ماں اور بچے کے صحت کا بنیادی تصور کار فرما ہے۔ اس کے لیے زچہ اور بچہ کا جدید ترین شعبہ قائم کیا گیاہے اور ماہرین اطفال کی خدمات حاصل کی گئی ہیں۔ شروع میں اس رازی ہسپتال میں امرض نسواں، زچہ بچہ،داخلی عمومی امراض، عمومی جراحت، امراض چشم، امراض جلد، امراضِ قلب، کان، ناک، حلق کے امراض، امراضِ دنداں ذیا بطیس،امراض اطفال، اور نفسیاتی امراض کا انتظام کیا گیا ہے۔ہنگامی علاج کے لیے شعبہ بھی موجود ہے۔ایکسرے،الڑاساؤنڈ اور جدید کیلنیکل لیبارٹی کی سہولت،جدید آپریشن تھیٹر اور لیبر روم کی بھی ابتدائی سہولت موجود ہے۔اس کے بعد الخدمت رازی ہسپتال داخل ہونے والے مریضوں کے لیے اس وقت ساٹھ بیڈز کا انتظام ہے۔ اس کو سو بیڈز کا انتظام کرنے کا اردہ رکھتی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ ہڈی اور جوڑ کے امراض، امراض گردہ جیسے گردوں کی صفائی اور پیوندکاری،عصابی امراض، امراضِ قلب اورجراحتِ قلب کے شعبے کی قائم کرے گی۔ حتی الامکان درست تشخیص کے لیے مستقبل میں سی ٹی اسکین اور ایم آر آئی جیسی سہولیات کے انتظام کی بھی کوشش کی جائے گی۔ ظاہر ہے یہ سب کام عوام کے عطیات کے ذریعے ہی ممکن ہوئے ہیں۔ مستقبل کے پروگراموں میں رنگ بھرنے کے لیے بھی عوام کے عطیات کی ضرورت ہے۔ رازی ہسپتال کی انتظامیہ نے اس موقعہ پر عوام سے مذید عطیات دینے کی اپیل کی ہے۔رازی ہسپتال میں موجود سہولتیں عوام کی اکثریت کے لیے کافی نہیں۔ جدید ایکسرے مشن جو کہ کم ا ز کم چالیس پچاس لاکھ روپے ،ایم آئی آر مشین کروڑوں روپے،گردوں کی صفائی اور ڈائیلیسس کی مشین کے لیے بھی چایس لاکھ روپے کی ضرورت ہے۔علاج کے لیے جدیدمشینری سی ٹی سکین کی ضرورت ہے جس کے لیے کم از کم آٹھ کروڑ روپے درکار ہیں۔اس کے لیے ایک جدید کیتھ لیپ اور چھ بستروں پر مشتمل دل کی انتہائی نگہداشت کامرکز یا سی سی یو قائم کرنا ہے۔ یہ مستقبل کی ضروریات ہیں جس سے عوام کی بہتر انداز میں خدمت کی جا سکتی ہے۔اس خاکے میں رنگ صرف عوام کے تعاون سے ہی ممکن ہے ۔افتتاح کے موقعہ پر راولپنڈی اور اسلام آباد کے کثیر لوگوں نے شرکت کی۔ اس موقعہ پر تقریر کرتے ہوئے سی بی آر کے چیف الطاف بھٹ نے کہا سی بی آر سوسائٹی اورالخدمت کے تعاون سے یہ رازی ہسپتال بنی ہے۔ یہ ایک اچھی بات ہے۔ پہلے اس علاقے میں صحت کی سہولت موجود نہیں تھی۔اس ہسپتال سے ارد گرد رہائشی سوسائٹیوں کے لوگ فاہدہ حاصل کریں گے۔انہوں نے کہا کہ وہ شہر کی چالیس سے زائد سوسائٹیوں کے مشترکہ نمائندہ ہیں۔ہم مسجد کے قریب ایک علیشان مسجد بھی تعمیر کریں گے۔ سراج الحق سینیٹر اور امیر جماعت اسلامی نے اپنی تقریر میں کہا کہ جماعت اسلامی خوشحال اور اسلامی پاکستان کے لیے کوششیں کر رہی ہے۔ خوشحال پاکستان میں صحت کا خاص خیال رکھا جائے گا۔ پرائیویٹ ہسپتالوں میں عوام کو لوٹا جاتا ہے۔ اس رازی ہسپتال میں غریبوں کا بلکل مفت علاج کیا جائے اور امیروں سے بھی سستے ریٹ پر علاج کیا جائے گا۔ اپنی تقریر میں رازی ہسپتال کی انتظامیہ کے چیف نے اس ہسپتال کو قائم کرنے کے اغراض و مقاصد بیان کیے۔ انہوں کہا کہ رازی ہسپتال کی تعمیر کے دوران جماعت اسلامی اسلام آباد کے امیر جناب زبیرفاروق نے بہت تعاون کیا۔ ایک ایک کمرے اور ایک ایک دیوار کا معائنہ کیا۔ ہماری حوصلہ افزائی کی۔ہم ان کے شکر گزار ہیں۔الخدمت فاؤڈیشن کے چیف عبدلشکور

۲
صاحب راستے میں ٹریفک جام ہونے کی وجہ سے دیر سے تشریف لائے۔ باوجود کہ سراج الحق امیر جماعت اسلامی اپنی تقریر ختم کر چکے تھے۔عبدالشکور صاحب کو کچھ کہنے کی لیے بلایا گیا۔ انہوں نے الخدمت فاؤڈیشن کی ملک اور بیرون ملک خدمات پر اپنی تقریر میں روشنی ڈالی۔ اپنی حالیہ کوششوں جس میں وہ اپنی ٹیم کے ساتھ روہنگیا کے مسلمان ،جو لاکھوں کی تعداد میں برما کی دہشت گرد فوج اور بھگشوں کی مشترکہ مسلم دشمنی کی وجہ سے روہنگیا سے نکال دیے۔ وہ بنگلہ دیش اور برما کی سرحد پر کیمپوں میں بے یارو مددگار کھلے آسمان کے نیجے پڑے ہوئے ہیں۔ بارش کے دوران ان کے سروں پر چھت نہیں۔ ان کے لیے سینیٹری کا انتظام نہیں۔علاج کے لیے ڈاکڑ نہیں۔ کھانے پینے کی اشیانہیں بلکہ کچھ بھی نہیں۔ اس مشکل کی گھڑی میں عبد ا لشکور صاحب اپنے ٹیم کے ساتھ بنگلہ دیش کی سرحد پر پہنچے اورملایشیا،انڈونیشیا اورترکی این جی اوز کے ساتھ مشترکہ روہنگیا کے مظلوم مسلمانوں کی مدد کی۔الغرض الخدمت فاؤڈیشن کی تاریخ عوام کی خدمت سے سنہری حروف سے بھری پڑی ہے۔ الخدمت رازی ہسپتال بھی ارد گرد رہنے والے عوام کی خدمت کرے گی۔
ان شااللہ۔