2027 تک بھارت پرمسلمانوں کا قبضہ ہوجائے گا، ہندو انتہا پسند رہنما کا دعویٰ

تر پردیش: بھارتی ریاست اتر پردیش میں بی جے پی کی نظریاتی اتحادی تنظیم ہندو یووا واہنی کے رہنما ناگیندر پرتاب نے دعویٰ کیا ہے کہ بھارت میں مسلمانوں کی آبادی اسی طرح بڑھتی رہی تو 10 برس بعد ملک پر ان کا قبضہ ہوجائے گا۔
بھارتی میڈیا کے مطابق اترپردیش میں ہندو یووا واہنی نامی ہندو انتہا پسند تنظیم کے رہنما ناگیندر پرتاب تومار نے کارکنوں سے خطاب کے دوران کہا کہ جس تیزی کے ساتھ بھارت میں مسلمانوں کی آبادی میں اضافہ ہورہا ہے اس سے محسوس ہورہاہے کہ 2027 تک بھارت ایک مسلم ملک کے طور جانا جائے گا، یہ مسلمانوں کی ایک منظم سازش ہے جس کے تحت وہ بھارت پراپنا مکمل قبضہ کرنا چاہتے ہیں۔
واضح رہے کہ وزیراعلیٰ اترپردیش یوگی ادتیا شدت پسند تنظیم ہندو یووا واہنی کے سربراہ ہیں جو ماضی میں بھی مسلمانوں کے خلاف متعدد اشتعال انگیز اور متنازع بیانات جاری کرچکے ہیں جس پر ہندوستان کے لبرل،سیکولر،عوام اور میڈیا کی جانب سے شدید تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے, یوگی ناتھ ادتیا بھارت میں ایک متنازع سیاستدان کے طورپربھی جانے جاتے ہیں.