الائیڈ ہیلتھ سپورٹس سٹاف کا احتجاج دوسرے روز بھی جاری رہا

جہلم(عبدالغفور بٹ)مرحوم غلام قادر کے لواحقین کے ساتھ اظہار یکجہتی اور اس کے اوپر ہونے والے ظلم کے خلاف الائیڈ ہیلتھ سپورٹس سٹاف کا احتجاج دوسرے روز بھی جاری رہا،احتجاج کرنے والوں کا وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف سے ایک ہی مطالبہ ہے کہ ای ڈی او ہیلتھ کیپٹن(ر)آصف علی خان کو معطل کیا جائے اور ان کے خلاف مکمل انکوائری کی جائے جو ظالمانہ اور جابرانہ رویہ ہیلتھ ملازمین کے ساتھ رکھا جارہا ہے اس کے کیا عزائم ہیں۔جبکہ یہ وہی ہیلتھ سٹاف ہے جس کی وجہ سے اس کی کارکردگی مسلسل کتنے مہینوں سے پہلے نمبر پر آرہی ہے ای پی آئی سٹاف اورڈینگی سرولینس سٹاف اور آنے والی پولیو مہمات میں بھی کام نہیں کریں گے اگر ہمارے مطالبات تسلیم نہ کیے گئے اور اس وقت تک احتجاج جاری رکھنے کا عزم لیے ہوئے ہیں کہ جب تک ان کو انصاف نہیں مل جاتا اور ان کے جائزمطالبات پورے نہیں کیے جاتے۔فیلڈ سٹاف کی صدر ( سکول ہیلتھ نیوٹریشن آفیسر )سیدہ ام لیلیٰ کی سربراہی میں پریس کلب سے لے کر ڈی سی او جہلم کے آفس تک مارچ کیا گیا اور ڈی سی اوجہلم کو ملازمین کی طرف سے درخواست اور اپنے مطالبات پیش کیے گئے جس پرا نہوں نے ثبوت کے ساتھ کل بروز بدھ دس بجے ڈی او سی آفس میں سیدہ ام لیلیٰ اور ان کے دیگر ساتھیوں کو مدعو کیا۔تمام الائیڈ ہیلتھ کا یہ واضح اعلان ہے کہ اگر کل ہمیں انصاف نہ دیا گیا تو ہم یہ احتجاج منسوخ نہیں کریں گے۔