کھیوڑہ ناقص میٹریل اور انتظامیہ کی ملی بھگت سے بننے والا روڈ

ؒ للِہ ( نور چغتائی سے )کھیوڑہ ناقص میٹریل اور انتظامیہ کی ملی بھگت سے بننے والا روڈ چند ہفتوں کے بعد ہی کھنڈرات بن گیا انتظامیہ نے ٹھکیدار کو ناقص میٹریل استعمال کرنے اور روڈ کی ناقص تعمیر کرنے اور روڈ بغیر لیول کے تیار کرنے کی کھلی چھٹی دی ہوئی تھی ٹھکیدار نے انتظامیہ کی ملی بھگت سے سرکاری خزانے کو لاکھوں روپے کا چونا لگا گیا منتخب نمائندوں کی عدم دلچسپی اعلی حکام روڈ کی ناقص تعمیر کرنے پر ٹھکیدار اور اپنی ڈیوٹی میں غفلت برتنے والے افسران کے خلاف فوری ایکشن لیں تفصیلات کے مطابق کھیوڑہ مین روڈ کئی سالوں سے کھنڈرات بنا ہوا ہے مگر بدقسمتی سے ایک کلومیٹر روڈ 84 لاکھ روپے میں بنی اور بننے والی روڈ کی تعمیر میں انتہائی ناقص میٹریل استعمال کیا گیا اور انتظامیہ نے بھی اپنی ڈیوٹی میں غفلت کی اور تعمیر کے دوران ناقص میٹریل اور ناقص تعمیر کرنے پر کوئی چیک اینڈ بیلنس نہیں ہو ا روڈ کی اور تعمیر کے دوران لیول چیک کرنے کی بھی زحمت نہیں کی اور چند ہفتوں کے بعد ہی بننے والا روڈ کھنڈرات میں تبدیل ہو گیا مگر افسوس کہ انتظامیہ نے روڈ کو کھنڈرات بننے کے بعد بھی ٹھکیدار کے خلاف کوئی ایکشن نہیں لیا ٹھکیدار کے ایگریمنٹ کے مطابق پراجیکٹ مکمل ہونے کے بعد ٹھکیدار چھ ماہ تک ٹوٹ پھوٹ ہونے والے کام کو دوبارہ کرنے کا پابند ہوتا ہے اگر کام میں کوئی پرابلم نہ ہو تو پھر ٹھکیدار انتظامیہ سے اپنی سیکورٹی فیس واپس لے سکتا ہے مگر ابھی چندہفتے ہی گزرے ہیں اور روڈ کھنڈرات بنتا جا رہا ہے اعلی حکام روڈ کی ناقص تعمیر کرنے پر ٹھکیدار اور اپنی ڈیوٹی میں غفلت برتنے والے افسران کے خلاف فوری ایکشن لیں اور انتظامیہ کو پابند کیا جائے کہ ٹھکیدار کو سیکورٹی فیس دوبارہ روڈ کی مکمل تعمیر ہونے تک واپس نہ کرنے کا پابند بناجائے۔