اسلام کی بقاء کے لیئے کفار کے سامنے ڈٹ جانا ہی اصل جہاد ہے، امیر ابوقیتبہ جرار

جہلم(وسیم تبریز) اسلام کی بقاء کے لیئے کفار کے سامنے ڈٹ جانا ہی اصل جہاد ہے ،اور ئی کام اسوقت ہمارے کشمیر بھائی ،فلسطینی بھائی سر انجام دے رہے ہیں ،گو کہ کفار نے ظلم کی تمام حدیں پار کر دیں ہیں لیکن ہمارے ان بھائیوں کے ہمت و استقلال میں کوئی کمی نہیں آئی ،یہ بات جماعۃ الدعوۃ جہلم کے ضلعی امیر ابوقیتبہ جرار نے اپنے ایک بیان میں کہی ،انہوں نے کہا کہ امت مسلمہ اسوقت انتشار کا شکار ہے اور اسکی وجہ ہمارا حقائق سے نظریں چرانا ہے ،اور ہم اغیار کی جی حضوری میں لگے ہیں ،یہی وجہ ہے کہ ہم پر نیوورلڈ آڈروغیرہ مسلط کر کے ہمیں اس پر عمل دار آمد کا حکم دیا جاتا ہے ،ورنہ دھمکی دی جاتی ہے کہ تمیں پتھروں کے دور میں واپس بھیج دیا جائے گا ،یہ سب اسلام سے دوری کا نتیجہ ہے تاریخ پر نظر دورائیں تو یہ ورلڈ آڈر مسلمانوں کا ہو اکرتا تھا،نبی کریم ﷺ کی حدیث کا مفہوم کے آخری وقت میں مسلمانوں میں دہن کی بیماری ہو گی اسکا مطلب دنیا سے محبت اور دین سے دوری موت کا خوف وغیرہ ہے ،اور آج یہی کچھ ہو رہا ہے ،ہمارے وہ بھائی جو کفار کے سامنے سنیہ سپر کھڑے ہیں اور انکی ہر تکلیف کو دین اسلام کی خاطر برداشت کر رہے ہیں ہمارا بھی فرض بنتا ہے کہ مشکل کی اس گھڑی میں انکا ساتھ دیں۔یہ ہمارا خلاقی اور دینی فریضہ ہے

اسلام کی بقاء کے لیئے کفار کے سامنے ڈٹ جانا ہی اصل جہاد ہے، امیر ابوقیتبہ جرار” ایک تبصرہ

تبصرے بند ہیں