اپنے شوہراوراپنی بیوی کے قاتل ایک دوسرے کے جیون ساتھی بن گئے

کھٹمنڈو: نیپال کی ایک جیل میں اپنے اپنے شریکِ حیات کو قتل کرنے والے مرد اور عورت کے درمیان شادی کرادی گئی ہے لیکن جب تک دُلہا 14 سال کی سزا نہیں کاٹ لیتا اس وقت تک اپنی دُلہن کے پاس نہیں جاسکے گا۔
مغربی نیپال کے ضلع کالی کوٹ میں واقع ایک جیل میں 33 سالہ مرد قیدی دلی کوئرالہ اپنی بیوی کو قتل کرنے پر 20 سال قید کی سزا کاٹ رہا ہے جب کہ 30 سالہ خاتون ممکوشا بِستا نے اپنے شوہر کی جان لی تھی جس پر وہ 4 سال قید کی سزا بھگت رہی ہے۔ شادی کے لیے یہ رشتہ قاتل مرد کی ماں نے طے کیا ہے جو خود بھی اپنی بہو کے قتل کے لیے بیٹے کو مدد فراہم کرنے پر جیل میں ہے۔
شادی کرنے والی دُلہن ممکوشا بِستا کا اپنے نئے شوہر کے بارے میں کہنا ہےکہ اس نے اپنی بیوی کو اور میں نے اپنے شوہر کو قتل کیا، اسی وجہ سے مرد کی والدہ نے مجھے پسند کیا اور ہم قریب آتے گئے۔
نیپال جیل کے ایک افسر نے بتایا کہ شادی کی تقریب جیل کے اندر ہوئی اور اس کے لیے مقامی پنڈت کو بلایا گیا تھا جب کہ جیل اسٹاف اور چند دیگر جیل کے قیدی اس تقریب میں شامل تھے۔
اس نوبیاہتا جوڑے کو جیل میں ایک ساتھ رہنے کی اجازت نہیں کیونکہ مرد و زن کے لیے الگ الگ جیلیں بنائی گئی ہیں تاہم دونوں میاں بیوی ایک ماہ میں دو مرتبہ ایک دوسرے کے سامنے بیٹھ کر گفتگو کرسکیں گے۔
خاتون کے شوہر نے بتایا کہ ہم دونوں نے ایک جیسا ہی جرم کیا ہے اور ہم ایک دوسرے کو حقارت سے نہیں دیکھ رہے اور اسی وجہ سے قریب آگئے ہیں۔