مری کا تاریخی قدیمی لوئر بازارکھنڈرات کا بن چکا ہے ،واجد عباسی

مری(عثما ن علی سے) مرکزی انجمن تاجران مری کے سنیئرنائب صدر واجد عباسی نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ حکومت مال روڈ پر کروڑوں روپے کے فنڈز لگارہی ہے جبکہ اسکے ساتھ ہی مری کا تاریخی قدیمی لوئر بازارکھنڈرات کا بن چکا ہے پانچ سوتاجروں کے اس بازار میں پیدل چلنا بھی مشکل ہے نہ سٹریٹ لائٹس ،نہ پورے بازار میں پبلک واش روم اور نہ ہی پیدل چلنے کا راستہ ہے جس کی وجہ سے اس بازار کے تاجروں کا کاروبار بھی ختم ہوکر رہ گیا ہے سینکڑوں تاجروں اور ہزاروں کی افراد پرمشتمل میں آبادی کی زندگی اجیرن ہوچکی ہے سینئر نائب صدر واجد عباسی ،رہائشیوں اور تاجروں نے وفاقی وزیر شاہد خاقان عباسی اور صوبائی وزیر راجہ اشفاق سرور سے مطالبہ کیا ہے ایک جانب تو وہ مختلف علاقوں میں کروڑوں روپے کے فنڈز مہیا کررہے ہیں لیکن مری کے اس اہم ترین بازار اوراندرون شہر کی قدیمی اورتاریخی آبادی کو مکمل طور پر نظر انداز کیا جارہا ہے یہاں بھی ان کے ووٹر سپورٹرز رہتے ہیں اس لئے لوئر بازار اور اندرون شہر کی حالت زار درست کرنے کیلئے برفباری سے قبل خصوصی گرانٹ فراہم کی جائے اورموسم سرما کی شدت شروع ہونے سے قبل بازار اور اندرون شہر کی تعمیر شروع کرنے کے اقدامات کئے جائیں تاکہ یہاں کے بسنے والے عوام اور تاجر سکون سے رہ سکیں اور ان کا روبار بھی کرسکیں۔