موسم کے مطابق خود کو تبدیل کرنے والا مکان

الینوئے: تھری ڈی پرنٹنگ ٹیکنالوجی کی بدولت جلد ہی ایسے مکان تیار ہونے لگیں گے جو موسم کی مناسبت سے یا اپنے مکینوں کی پسند کے مطابق اپنی شکل تبدیل کرسکیں گے۔
امریکی ماہرِ تعمیرات نے ’’لچک دار اور خودکار طور پر سکڑنے سمٹنے والا مکان‘‘ ڈیزائن کرلیا ہے جس کی دیواروں سے لے کر چھت تک سمیٹی اور پھیلائی جاسکیں گی۔ اسے مستقبل کا ’’روبوٹ مکان‘‘ بھی کہا جاسکتا ہے کیونکہ اس میں دیواروں اور چھت کو حرکت دینے کے لیے روبوٹ ٹیکنالوجی استعمال کی جائے گی۔

اسے ایک ایسے ڈبے سے بھی تشبیہ دی جاسکتی ہے جس کی چھت اور دیواریں مختلف مضبوط اور مستطیل شکل والے ٹکڑوں کو آپس میں جوڑ کر تیار کی جائیں گی۔ ان میں سے ہر ٹکڑا دیوقامت تھری ڈی پرنٹر کے استعمال سے تیار کیا جائے گا۔ اس طرح کے بڑے تھری ڈی پرنٹر تیار کیے جاچکے ہیں جن سے مختلف کاموں میں استفادہ کرنے کے بارے میں سوچا جارہا ہے۔
گرمیوں کے موسم میں مکان کو دھوپ اور گرم ہوا سے بچانے کے لیے اسے چاروں طرف سے بند کیا جاسکے گا، سردیوں کے دنوں میں دھوپ حاصل کرنے کے لیے اس کی دیواریں اور چھت اس طرح سے پھیلائی جاسکیں گی کہ زیادہ سے زیادہ دھوپ اندر پہنچ سکے، بارش کے وقت اس کی چھت بند کی جاسکے گی جب کہ دیواروں میں ہوا کے گزرنے کے لیے مناسب خلاء پیدا کیا جاسکے گا۔

ماہرتعمیرات کا کہنا ہے کہ یہ مکان اپنی شکل اتنی زیادہ تبدیل کرسکے گا کہ اپنی پچھلی ساخت کو مدنظر رکھتے ہوئے پہچانا بھی نہیں جاسکے گا۔

فی الحال اس کا پروٹوٹائپ تیار ہوچکا ہے جو صرف ایک چھوٹے کمرے جتنا ہے۔ مستقبل میں اس کے زیادہ بڑے، پیچیدہ اور قابلِ رہائش نمونے بنائے جائیں گے۔