ورلڈ فوڈ ڈے۔۔۔صحت اور متوازن غذا،،،،تحریر : عثمان احمد سندھو۔ ڈسٹرکٹ انفارمیشن آفیسر جہلم

صحت بخش زندگی اور متوازن غذا اس دنیا کے ہرانسان کا بنیادی حق ہے ، اس مقصد کیلئے جہا ں حکومتو ں پر کچھ ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں وہیں ہر انسان کیلئے آگاہی ضروری ہے کہ متوازن غذا ہے کیا تاکہ وہ اسے اپنے روز مرہ معمولات کا حصہ بنا کر صحت مند زندگی گذار سکے۔ دنیا بھر میں بسنے والے انسانوں کو متوازن خوراک کے حوالے سے آگاہی فراہم کرنے کیلئے 16اکتوبر کو ورلڈفوڈ ڈے کے طور پر منایا جاتا ہے۔ وزیر اعلی پنجاب میاں شہباز شریف کی ہدایات کے مطابق صوبے کے دیگر اضلاع کی طرح ضلع جہلم میں بھی ورلڈ فوڈ ڈے کے حوالے سے آگاہی واک اور سیمینار کا انعقاد کیا گیا ۔سیمینار میں بتایا گیا کہ حکومت پنجاب اپنے شہریوں کے لئے وافر مقدار میں خوراک کی پیداوار کیلئے جہاں انقلابی اقدامات کررہی ہے وہیں فوڈ سکیورٹی اور ملاوٹ مافیا کی حوصلہ شکنی کیلئے بھی موثر ترین اقدامات کررہی ہے۔ پنجاب میں اس حوالے سے اقدامات کا جائزہ لیا جائے تو اس میں فوڈ سکیورٹی حکومت کی ترجیحات میں ہر لحاظ سے سرفہرست ہے اس مقصد کیلئے گندم کی پیداوار اور گندم ذخیرہ کرنے کی صلاحیت میں اضافہ سرفہرست ہے۔ اس امر کو یقینی بنانے کی کوشش کی جارہی ہے کہ کسانوں کو صحت مند اور ترقی دادہ بیچ فراہم کئے جائیں تاکہ فی ایکٹر پیداوار میں زیادہ سے زیادہ اضافہ ممکن ہو سکے جو بڑھتی ہوئی آبادی کی ضروریات کو بھی پورا کر سکے، کھادوں کی قیمتوں میں واضع کمی اور کسانوں کو انکی پیداوار کا معقول معاوضہ کی ادائیگی بھی حکومت پنجاب کی ترجیحات میں شامل ہے ۔ دوسری طرف ایسے اقدامات بھی یقینی بنائے جارہے ہیں کہ آٹے کی قیمت مناسب سطح پر رکھی جائیں اس مقصد کیلئے وقتا فوقتا سبسڈیز کا بھی اعلان کیا جاتا ہے۔ گوداموں میں رکھی گندم کو موسم اور حشرات سے محفوظ رکھنے کیلئے جدید سہولیات سے مزین سٹورز کے قیام کیلئے اقدامات جاری ہیں۔ صوبہ پنجاب میں ملاوٹ مافیا کے تدارک کیلئے قانون میں ترامیم اور پنجاب فوڈ اتھارٹی بھی قائم کی گئی ہے جس نے تمام اضلاع میں کاروائیوں کے دوران بڑی تعداد میں ملاوٹ کے دھندے میں ملوث افراد کے خلاف قانونی کاروائی کی ہے حکومت اور تمام اداروں کی کوشش ہے کہ کھیت سے باورچی خانے تک شہریوں کو خالص خوراک کی فراہمی یقینی بنائی جاسکے اور اس خوراک میں انسانی صحت کیلئے ضروری تمام وٹامنز اور منرلز بھی وافر مقدار میں موجود ہونے چاہیے۔ پنجاب میں ملک کی سب سے بڑی فوڈ ٹیسٹنگ لیبارٹری کا لاہور میں قیام عمل میں لایا گیا ہے نیز چاول کی فورٹیفکیشن کا منصوبہ بھی زیرغور ہے یہ تمام اقدامات صوبے میں فوڈ سکیورٹی کیلئے حکومت پنجاب کے عزم صمیم کا منہ بولتا ثبوت ہیں۔ انسان کو اپنی غذا کو متوازن رکھنے کیلئے کس نوعیت کی خوراک استعمال کرنے چاہیے اس حوالے سے ماہرین سفارش کرتے ہیں کہ فورٹیفایڈ آٹا استعمال کیا جاناچاہیے اس آٹے کا استعما ل انسان میں خون کو بڑھاتا ہے اور یہ مکمل صحت مند اور غذائی اجزا سے بھرپور ہوتا ہے۔ ماہرین کے مطابق وٹامن اے اور ڈی سے بھرپور گھی بھی انسان میں بیماریوں کے خلاف قوت مدافعت بڑھاتا ہے ، خوراک میں وٹامنز اور منرلز کی تھورٹی سی مقدار بھی بیماریوں کے خلاف وافر قوت مدافعت پید ا کرتی ہے۔ آڈیوین ملے نمک کا استعمال انسانی صحت کیلئے نہایت مفید ہے خصوصا بچوں کی ذہنی نشوونما میں بہترین کردار ادا کرتا ہے۔ بچے کی پیدائش کے فوری بعد اسکے لئے بہترین خوراک اسکی ماں کا دودھ ہوتا ہے، ماہرین کے مطابق چھ ماہ تک ماں کا دودھ بچے کی مکمل غذا ہے تاہم چھ ماہ کے بعد ماں کے دودھ کے ساتھ نرم غذا کا استعما ل کرنا چاہیے، بچے کو دو سال تک دودھ پلانا اسکی صحت کیلئے نہایت اہم ہے۔ متوازن اور صحت بخش غذا میں انڈے، دودھ، مکھن، گوشت کا استعمال ہر انسان باالخصوص بچوں کیلئے بہت مفید ہے اسی طرح مٹر،دالیں، مونگ پھلیاں، سبزیاں استعمال کرنے سے بھی جسم کو بہترین غذائیت حاصل ہوتی ہے ۔ قومی غذائی سروے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ پاکستان کے شہری غذائیت کی کمی کا شکا ر ہیں ، خوراک میں وٹامنز کی کمی ہے جس کی وجہ سے مختلف بیماریاں عام ہیں، بچو ں کا وزن کم، قد عمر کے مطابق نہیں بڑھتا نیز سوکڑے پن کی بھی شکایات ہیں تاہم حکومت پنجاب نے صوبے میں ان مسائل پر قابو پانے کیلئے محکمہ خوراک، صحت، سوشل ویلفےئر، زراعت اور محکمہ تعلیم کے اشتراک سے موثر لائحہ عمل تیار کیا ہے جس کا مقصد عوام کو متوازن غذا کے بارے میں آگاہی فراہم کرنا اور انہیں متوازن غذا کی اہمیت سے آگاہ کر نا ہے نیز عوام کو یہ آگاہی فراہم کرنا بھی ہے کہ غذائیت کی کمی کے ساتھ غذائیت کی زیادتی کو روکنا بھی انسانی صحت کیلئے نہایت اہم ہے ، متواز ن غذا کھانے سے ہی انسان صحت مند زندگی گذار سکتا ہے ۔